16

اجتماعی پسماندگی کی بڑی وجہ علم و شعور کا فقدان ہے،پرنسپل ہزارہ کانونٹ ہائی سکول مانسہرہ

با مقصد تعلیم اور مسلسل تربیت سے ہی ہم اندھیروں سے روشنی کی جانب جا سکتے ہیں،محمد مشتاق
عالم اسلام بالعموم اور پاکستان بالخصوص جن مسائل کا شکار ہے اس کی وجہ علم و شعور کا فقدان ہے،ہزارہ کانونٹ ہائی سکول مانسہرہ کے پرنسپل کی لوح وقلم انٹرنیشنل سے گفتگو
عالم اسلام بالعموم اور پاکستان بالخصوص جن مسائل کا شکار ہے ان کی نوعیت سیاسی و اقتصادی اور معاشرتی بھی ہے اور اعلیٰ و تعلیمی بھی، اس اجتماعی پسماندگی کی سب سے بڑی وجہ علم و شعور کا فقدان ہے۔ با مقصد تعلیم اور مسلسل تربیت سے ہی ہم اندھیروں سے روشنی کی جانب جا سکتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار ہزارہ کانونٹ ہائی سکول مانسہرہ کے پرنسپل محمد مشتاق نے لوح و قلم انٹرنیشنل سے خصوصی ملاقات میں کیاانہوں نے کہا کہ اس نفسا نفسی کے دور میں جہاں معیاری تعلیم کا حصول انتہائی مشکل نظر آتا ہے وہاں ہمارے ملک میں کچھ ایسے تعلیمی ادارے بھی ہیں جنہوں نے تعلیم کو بزنس نہیں بنایا بلکہ معیاری تعلیم ہی ان کا اولین مقصد ہے۔ اللہ تعالیٰ کا شکر ہے کہ ہمارا ادارہ بھی انہی مقاصد کیلئے معرض وجود میں آیا۔ ہمارا ادارہ ہزارہ کانونٹ ہائی سکول مانسہرہ جس میں 600 کے لگ بھگ طلباء زیر تعلیم ہیں۔ ذاتی عمارت ہونے کے ساتھ ساتھ سکول میں بہترین سائنس لیب جدید کمپیوٹر، وسیع کلاس رومز، جدید طریقہ تعلیم، کھیل کود کے لیے وسیع ان ڈور گراؤنڈ کی سہولیات موجود ہیں طلباء و طالبات کیلئے الگ الگ کلاسز کا اجراء کیا گیا ہے ادارے میں وقتاً وفوقتاً اساتذہ کیلئے ٹریننگ کلاسز کا انعقاد بھی کیا جاتا ہے۔ ادارے میں نصابی و ہم نصابی سرگرمیوں پر بھرپور توجہ کے علاوہ طلباء کی کردار سازی پر بھی توجہ دی جاتی ہے۔ تا کہ آنے والے وقتوں میں یہ ملک و قوم کیلئے مفید ثابت ہو سکے۔ اس کے علاوہ ادارے میں سالانہ تقریب تقسیم انعامات اور یوم والدین باقاعدگی سے منعقد کیے جاتے ہیں جس میں ہزارہ ڈویژن کی نامور علمی و ادبی شخصیات کی شرکت ہزارہ کانونٹ ہائی سکول پر اعتماد کا اظہار ہے۔سکول کی تعلیمی کارکردگی کا اندازہ ہر سال بورڈ کے امتحانات میں 100 رزلٹ سے لگایا جا سکتا ہے۔ سال 2009-2010 کے سالانہ امتحانات میں طالبہ حمیرا احسان نے 932 نمبر لے کر بورڈ میں گیارہویں پوزیشن حاصل کی۔سکول کے ہونہار طالب علم ہزارہ ڈویژن میں ہونے والے مختلف مقابلوں میں نہ صرف حصہ لیتے ہیں بلکہ بہت سے انعامات بھی جیت چکے ہیں۔
حال ہی میں ماڈرن ایج پبلک سکول اینڈ کالج ایبٹ آباد میں جونیئر جوائے کے نام سے مقابلوں کا انعقاد کیا گیا جس میں پورے پاکستان سے 32 سکولوں نے حصہ لیا۔ اس میں Card Making Compatition میں سکول کی طالبات ملائکہ گیلانی اور عمامہ سلیم نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔ جناح کالجز آف کامرس میں منعقد کیے جانے والے نعت خوانی کے مقابلے میں عثمان مصطفی اور عاتکہ نے نمایاں پوزیشن حاصل کی۔حال ہی میں لیڈر شپ کیمپ PC بھور بن میں لگایا گیا۔ جس میں پورے پاکستان سے پچاس بچوں نے شرکت کی۔ جس میں عثمان خان نے سکول کی نمائندگی کی اور بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ہمیں امید کامل ہے کہ کامیابیوں کا یہ سفر جاری رہے گا۔ (انشاء اللہ)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں